جمہوری پاکستان امریکی مفادات کے لیے ناگزیر ہے، وائٹ ہاؤس 110

جمہوری پاکستان امریکی مفادات کے لیے ناگزیر ہے – ترجمان وائٹ ہاؤس

مسلم لیگ (ن) کے صدرشہباز شریف کے وزیراعظم منتخب ہونے پر امریکا کا ردعمل سامنے آگیا ہے، جس پر وائٹ ہاؤس کی سیکرٹری جین ساکی بنے کہا ہے کہ جمہوری پاکستان امریکی مفادات کے لیے ناگزیر ہے۔
میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے سیکرٹری وائٹ ہاؤس کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ساتھ دیرپا تعاون کی قدر کرتے ہیں۔ان سے سوال کیا گیا کہ کیا امریکی صدرجوبائیڈن پاکستان کے وزیراعظم کو فون کریں گے؟اس پر جین ساکی نے کہا کہ اس وقت ٹیلی فون کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتی۔ اہم، ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک مسلسل رابطوں میں ہیں۔ ہم متعدد امور پر قریبی رابطوں میں ہیں۔سیکرٹری وائٹ ہاؤس کا مزید کہنا تھا کہ امریکا قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتاہے، امریکا کسی بھی ایک جماعت کو دوسرے پر فوقیت نہیں دیتا، امریکا آئینی اور جمہوریت اصولوں کی حمایت کرتا ہے۔
واضح رہے کہ قومی اسمبلی نے مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کو نیا قائد ایوان منتخب کرلیا جس کے بعد شہباز شریف پاکستان کے 23 ویں وزیراعظم منتخب ہوگئے۔خیال رہےکہ نئے قائد ایوان کے لیے متحدہ اپوزیشن کی جانب سے شہباز شریف اور تحریک انصاف کی جانب سے شاہ محمود قریشی وزیراعظم کے امیدوار تھے تاہم پی ٹی آئی کی جانب سے بائیکاٹ کے بعد شہباز شریف واحد امیدوار رہ گئے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں